تھپڑ سے ڈر نہیں لگتا صاحب، پیار سے لگتا ہے‘

 

 

اداکارہ سوناکشی سنہا نے حال ہی میں دبنگ سیریز کی اگلی کڑی، دبنگ تھری کی شوٹنگ شروع کر دی ہے۔ دبنگ میں کردار رجو کا یہ ڈائیلاگ کافی مشہور ہوا تھا ‘تھپڑ سے ڈر نہیں لگتا صاحب، پیار سے لگتا ہے۔’
اب رجو یعنی سوناکشی کی خواہش ہے کہ ان کے کردار کے لیے ایک بار پھر کوئی یادگار ڈائیلاگ لکھا جائے۔

 

 

امید ہے فلم نگاروں کو ان کا مشورہ اچھا لگے۔ اب سلمان خان کے ساتھ تین فلمیں کرنے کے بعد بھی سوناکشی نے دبنگ کے بعد کئی فلمیں کیں جن میں’اکیرا’ جیسی فلم میں انھوں نے یہ بھی ثابت کر دیا کہ وہ رومانس اور کامیڈی کے ساتھ ساتھ ایکشن بھی کر سکتی ہیں۔

لیکن خان صاحب کے ساتھ تین فلمیں کرنے کے بعد بھی سوناکشی کو شاید یہ بات سمجھ میں نہیں آئی کہ خان صاحب کے سامنے ہیروئنز کا نہ تو کوئی خاص رول ہوتا ہے اور نہ ہی ڈائیلاگ۔ کہانی اور کیمرہ صرف اُن کے ہی ارد گرد گھومتا ہے۔

ادھر اداکار ٹائیگر شروف اپنی آنے والی فلم سٹوڈنٹ آف دی ایئر ٹو کی ریلیز سے پہلے اس کی پروموشن میں مصروف ہیں اور جیسا کہ فلم کی ریلیز سے پہلے اکثر سٹارز اپنی ذاتی زندگی کا کوئی راز یا کوئی خاص بات میڈیا کے سامنے پیش کرتے ہیں، ٹائیگر نے بھی اپنی زندگی کے کچھ نئے پہلوؤں کو سب کے سامنے رکھا۔

ٹائیگر شروف انتہائی باصلاحیت اداکار لیکن شرمیلے انسان ہیں۔ انھوں نے تسلیم کیا کہ ان کی شکل اپنی ممی سے زیادہ ملتی ہے جبکہ ان کے پاپا پیدائشی سٹار ہیں اور بہت ہی پر اعتماد ہیں اور کھول کر بولتے ہیں۔ جبکہ اس کے برعکس ٹائیگر خود خاموش طبیعت اور شرمیلے ہیں۔

ٹائیگر کا کہنا تھا کہ وہ اپنی پہچان صرف جیکی شروف کے بیٹے کے طور پر نہیں چاہتے اور ایسا کرنے کے لیے انھیں بہت محنت کرنی پڑی ہے تاکہ وہ اپنے والد کی شخصیت کے سائے سے باہر نکل سکیں۔
ٹائیگر نے فلم ہیرو پنتی، باغی باڑی ٹو جیسی فلمیں کر کے کافی حد تک انڈسٹری میں اپنی پہچان بنا لی ہے۔
جبکہ نواز الدین صدیقی نے کافی کم عرصے میں بالی ووڈ میں اپنا خاص مقام بنا چکے ہیں۔ گینگز آف واسع پور، کہانی اور فلم کک کے بعد نواز نے مڑ کر نہیں دیکھا۔
یہ اور بات ہے کہ وہ انڈسٹری میں آنے کی کوشش کافی عرصے سے کر رہے تھے۔ انھوں نے 1999 میں عامر خان کی فلم سرفروش میں ایک چھوٹا سا رول کیا اس کے بعد منا بھائی ایم بی بی ایس اور رام گوپال ورما کی فلم جنگل میں بھی نظر آئے۔

لیکن گینگز آف واسع پور کے بعد بدلہ پور بجرنگی بھائی جان اور کک نے انکی کیرئیر کو کِک لگائی اور نواز کامیابی کی سیڑھیاں چڑھتے گئے۔
حال ہی میں ایک انٹرویو میں جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا انڈسٹری میں نیا ہونے کے سبب انھیں ابتدا میں اپنا کیرئیر بنانے میں مشکل ہوئی تو اس بارے میں نوازالدین کا کہنا تھا کہ اگر آپ میں صلاحیت ہے تو کوئی بھی آپ کو آگے بڑھنے سے نہیں روک سکتا۔

یہ اور بات ہے کہ کئی بڑے بڑے سٹارز کے بچے اپنی پہلی فلم کے بعد بھی اپنی کوئی جگہ نہیں بنا سکے۔
کنگنا رناؤٹ اور انکی بہن رنگولی اور بھٹ فیملی کے درمیان طنز کے نشتر کافی عرصے سے چل رہے ہیں۔
اب آخرکار فسلماز مہیش بھٹ نے کنگنا رناؤٹ کی بچی کہہ کر معاملے کو رفع دفع کرنے کی کوشش کی ہے۔
اپنی بیٹی عالیہ اور پھر خود انکے بارے میں کنگنا اور انکی بہن کے بیانات کے جواب میں انھوں نے کہا کہ کنگنا انکی کی بچی جیسی ہے اور انکی پرورش انھیں اجازت نہیں دیتی کہ وہ اپنے بچوں کے بارے میں کچھ غلط کہیں۔

مہیش بھٹ نے تو کنگنا کو اپنی بچی کہہ کر اس پنڈورا بکس کو بند کرنے کی پوری کوشش کی ہے اب دیکھنا ہے کہ کنگنا یا رنگولی اب کوئی نیا بین بجا کر اس پٹارے کو دوبارہ کھولنے کی کوشش کریں گی یا نہیں۔