پی ایس ایل فور: پاکستان سپر لیگ کے 9 سب سے یادگار لمحات

 

 

پاکستان سپر لیگ فور کا ایک ماہ سے زائد جاری رہنے والا میلہ اپنی تمام تر رعنائیوں کے ساتھ اختتام پذیر ہو گیا ہے۔ اس میلے کے فائنل معرکے میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز فاتح قرار پائی ہے۔
پی ایس ایل نے جہاں متحدہ عرب امارات اور پاکستان کے کرکٹ شائقین کو اپنے سحر میں جکڑے رکھا وہیں دنیا بھر کے کرکٹ شائقین بھی اس سے لطف اندوز ہوئے۔
لیکن پی ایس ایل کے حالیہ سیزن میں چند ایسے لمحات اور واقعات بھی سامنے آئے جنھوں نے یا تو میچ کا پانسہ پلٹ دیا، تماشائیوں کے چہروں پر مسکراہٹ بکھیر دی یا پھر ان کے اندر موجود ناقد کو جنم دیا۔

 

 

 

 

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے ڈوین براوو کا ڈانس ہو یا قلندرز کے فواد رانا کے چہرے کے بدلتے تاثرات، یہ تمام رنگ اگلے سال دوبارہ پی ایس ایل کا میلہ سجنے تک شائقین کی یاداشت میں تازہ رہیں گے۔

پاکستان سپر لیگ فور کے پہلے ناک آؤٹ میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد کراچی کنگز کو چار وکٹوں سے شکست دی تھی۔

میچ کے ایک مرحلے میں کراچی کنگز کے بائیں ہاتھ کے بولر عمر خان کے سپیل کے اختتام پر لگ رہا تھا کہ کراچی شاید میچ میں کامیاب ہو جائے لیکن یونائیٹڈ کے آصف علی نے زوردار ہٹنگ کر کے جیت کو یقینی بنایا۔ آصف علی پی ایس ایل کے چوتھے ایڈیشن میں سب سے زیادہ چھکے لگانے والے بیٹسمین ہیں۔

پاکستان سپر لیگ کے شارجہ میں کھیلے گئے 11ویں میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے محمد سمیع نے پشاور زلمی کے خلاف آخری اوور میں مسلسل تین گیندوں پر وہاب ریاض، عمید آصف اور حسن علی کو آؤٹ کرکے نہ صرف پی ایس ایل کے حالیہ سیزن کی واحد بلکہ پہلی ہیٹ ٹرک کی تھی۔

میچ کے آخری اوور میں پشاور زلمی کو جیتنے کے لیے 19 رنز درکار تھے۔ اس میچ میں اسلام آباد یونائیٹڈ نے پشاور زلمی کو جیتنے کے لیے 159 رنز کا ہدف دیا تھا۔

پاکستان سپر لیگ کے 28ویں میچ میں کراچی کنگز نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو ایک رن سے شکست دی، اس کامیابی سے کراچی کنگز نے پی ایس ایل کے پلے آف مرحلے میں رسائی حاصل کی تھی۔
کراچی کنگز کے 190 رنز کے جواب میں کوئٹہ کی ٹیم کو میچ کے آخری اوور میں جیت کے لیے پانچ رنز درکار تھے۔

تاہم عثمان شنواری کی تباہ کن بولنگ کی بدولت گلیڈی ایٹرز ہدف حاصل نہ کر سکی۔ عثمان شنواری نے آخری اوور میں احمد شہزاد، انور علی اور سرفراز احمد کو آؤٹ کیا۔ عثمان شنواری کو میچ آف دی میچ کا ایوارڈ دیا گیا تھا۔

جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے لاہور قلندرز کے کرکٹر اے بی ڈی ویلیئرز چوٹ کی وجہ سے پاکستان میں پی ایس ایل کے مقابلوں میں شرکت نہ کر سکے جس سے پاکستانی شائقین کو مایوسی ہوئی۔

ڈی ویلیئرز اپنی جارحانہ بیٹنگ کے لیے مشہور ہیں اور کرکٹ شائقین کو ان سے بہت توقعات تھیں۔ لاہور قلندرز کے منیجر ثمین رانا نے اپنے بیان میں کہا کہ ‘لاہور قلندرز اور اس کے پرستاروں کے لیے یہ ایک مایوس کُن خبر ہے کہ اے بی ڈی ویلیئرز پاکستان میں ہونے والے پی ایس ایل میچ نہیں کھیل پائیں گے لیکن ہم امید کرتے ہیں کہ وہ جلد صحت یاب ہوں۔ وہ ایک حیرت انگیز کھلاڑی اور شاندار انسان ہیں۔

پاکستان سپر لیگ کا متحدہ عرب امارات میں لاہور قلندرز اور پشاور زلمی کے درمیان کھیلے جانے والا میچ کرکٹ شائقین اور خصوصاً لاہور قلندرز کو اگلے سیزن تک ایک برے خواب کی طرح یاد رہے گا۔

اس میچ میں قلندرز نے زلمی کو 125 رنز کا ہدف دیا تھا۔ زلمی کی ٹیم 20 رنز پر پانچ وکٹیں کھو تھی تو ایسا لگ رہا تھا کہ قلندرز 125 رنز کا دفاع کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے لیکن مصباح اور ڈیرن سیمی کی شاندار 100 رنز کی شراکت نے قلندرز کی ساری امیدوں پر پانی پھیر دیا۔

پاکستان سپر لیگ کے حالیہ سیزن میں پاکستان کرکٹ بورڈ کو اس وقت خفت کا سامنا کرنا پڑا جب کراچی کنگز اور لاہور قلندرز کی جانب سے ایک دوسرے کے خلاف نامناسب زبان اور اشارے استعمال کیے جانے کی شکایات موصول ہوئیں۔

دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے میچ کے اختتام پر کراچی کنگز کے صدر اور سابق فاسٹ بولر وسیم اکرم نے شکایت کی کہ کراچی کنگز کے ڈریسنگ روم کے اوپر واقع لاہور قلندرز کے مہمانوں کے باکس سے ان کے بارے میں مبینہ طور پر نامناسب نعرے لگائے گئے ہیں اور نامناسب اشارے بھی کیے گئے ہیں۔

لاہور قلندرز کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر عاطف رانا نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے کراچی کے وسیم اکرم، عماد وسیم اور محمد عامر پر مبینہ طور پر لاہور قلندرز کے باکس کی طرف دیکھتے ہوئے نامناسب زبان استعمال کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔

لاہور قلندرز کی ٹیم پاکستان سپر لیگ کے حالیہ سیزن میں بھی پلے آف مرحلے سے باہر ہو گئی۔ جس نے لاہور قلندرز کی ٹیم منیجمنٹ کے ساتھ ساتھ پاکستان اور خصوصاً لاہور کے شائقین کو بے حد مایوس کیا۔
لاہور قلندرز کے مالک فواد رانا اپنی ٹیم کی مسلسل ناکامی پر خاصے دلبرداشتہ ہوئے اور انھوں نے لاہور کے لوگوں سے اپنی ٹیم کی مایوس کن کارکردگی پر معافی بھی مانگی۔ انھوں نے کہا تھا کہ ان کی ٹیم ہار ہار کر تھک چکی ہے۔

پی ایس ایل کے فائنل میچ میں شین واٹسن کے آؤٹ ہونے کے بعد امام الحق کی جانب سے تلخ فقرے بازی پر کرکٹ شائقین نے انھیں سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہیں۔ سوشل میڈیا پر چھڑی بحث میں شائقین انھیں اس حرکت پر سفارشی اور بد اخلاق قرار دے رہے ہیں۔

کرکٹ شائقین کا کہنا تھا کہ شین واٹسن نے پاکستان آکر دنیا کو پاکستان آنے کی ترغیب دی ہے ہمیں ان کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔ یہ مناسب نہیں ہے کہ حال ہی میں بمشکل قومی ٹیم میں جگہ بنانے والے امام ان سے بد تہذیبی سے پیش آئیں۔

پی ایس ایل کے حالیہ سیزن میں بطور کمنٹیٹر شریک ہونے والے جنوبی افریقہ کے مایہ ناز کھلاڑی جونٹی روڈز نے پیر کے روز فائنل سے قبل گورنر سندھ اور ہیوی بائیک کے ایک گروہ کے ساتھ کراچی کی سڑکوں کا آزادانہ چکر لگایا جس سے دنیا میں پاکستان کے پرامن ملک کا پیغام گیا ہے۔

جبکہ ہمیشہ کی طرح پاکستان کرکٹ شائقین کا دل جیتنے والے ویسٹ انڈین کھلاڑی اور پشاور زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی بھی اپنی روایت برقرار رکھتے ہوئے اس مرتبہ بھی پاکستانی رنگ میں ڈھل گئے۔ کراچی میں جہاں خوب سیر کی وہی مزار قائد پر پاکستانی پرچم تھامے ان کی تصویر نے دلوں میں ان کے احترام کو اور بڑھا دیا ہے۔