پی ایس ایل: پشاور زلمی نے کراچی کنگز کو 61 رنز سے ہرا دیا

 

 

کراچی نیشنل کرکٹ سٹیڈیم میں پاکستان سپر لیگ کے 30ویں میچ میں پشاور زلمی نے کراچی کنگز کو 61 رنز سے شکست دے دی۔ زلمی نے کراچی کو جیت کے لیے 204 رنز کا ہدف دیا تھا۔
کراچی کنگز کی پوری ٹیم 16.2 اوورز میں 142 رنز پر ڈھیر ہو گئی۔ کراچی کنگز کے کولن انگرام کے علاوہ کوئی بھی کھلاڑی وکٹ پر زیادہ دیر نہیں ٹھہر سکا۔ پشاور زلمی کے حسن علی نے تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ جبکہ وہاب ریاض، ثمین گل اور ٹائمل ملز نے دو دو کھلاڑیوں کو آوٹ کیا۔

کراچی کنگز نے ٹاس جیت کر پشاور زلمی کو بیٹنگ کی دعوت دی تھی۔ زلمی نے مقررہ 20 اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 203 رنز بنائے تھے۔
کراچی کنگز کی جانب سے کولن انگرام کے علاوہ کوئی بھی کھلاڑی بڑا سکور کرنے میں کامیاب نہ ہو سکا۔ پشاور زلمی نے اننگز کی آغاز میں ہی کنگز کی وکٹیں حاصل کر کے میچ پر اپنی گرفت مضبوط کر لی تھی۔
زلمی کی عمدہ بولنگ کو انگرام نے 37 گیندوں پر 71 رنز کی جارحانہ اننگز کھیل کر چیلنج کرنے کی کوشش کی تاہم اس کوشش میں وہ ٹائمل ملز کی گیند پر آوٹ ہوئے۔
کراچی کے آخری آوٹ ہونے والے کھلاڑی عمر خان تھے جو 16 ویں اوور میں رن آوٹ ہوئے۔ جبکہ اس سے پہلی گیند پر کپتان عماد وسیم کو حسن علی نے آوٹ کیا۔
محمد عامر بغیر کوئی رن بنائے وہاب ریاض کی گیند پر آؤٹ ہوئے اور سہیل خان صرف ایک رن بنا کر حسن علی کا شکار ہوئے۔
کراچی کنگز کے پانچویں آؤٹ ہونے والے کھلاڑی افتخار احمد صرف چار رنز بنا کر ثمین گل کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے۔ اس سے قبل بین ڈنک بھی چھ رنز پر وہاب ریاض کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔ لییم لیونگسٹون بھی صرف چھ رنز بنا کر ٹائمل ملز کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔

اس سے پہلے بابر اعظم کا بھی جادو نہ چل پایا اور وہ 13 رنز بنا کر ثمین گل کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے تھے۔ کنگز کی جانب سے آوٹ ہونے والے پہلے کھلاڑی کولن منرو تھے جو بغیر کوئی سکور بنائے حسن علی کی گیند پر آؤٹ ہوئے۔

پشاور زلمی کی جانب سے کامران اکمل اور امام الحق نے بیٹنگ کا شاندار آغاز کیا اور گراؤنڈ کے چاروں اطراف دلکش سٹروکس کھیلے اور پہلی وکٹ کی شراکت داری میں 137 رنز بنائے۔ کامران اکمل نے صرف 48 گیندوں میں 86 رنز کی جارحانہ اننگ کھیلی جبکہ امام الحق نے ان کا بھرپور ساتھ دیا اور 59 رنز بنائے۔

 

 

 

زلمی کا سکور 14ویں اوور تک 150 رنز تک پہنچ گیا تھا اور یہ توقع کی جارہی تھی کہ وہ اپنے مقررہ 20 اوورز میں 220 رنز تک پہنچنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ تاہم محمد عامر نے عمدہ بولنگ کا مظاہرہ کیا اور کراچی کنگز کو میچ میں واپس لانے میں کامیاب رہے۔ محمد عامر نے اپنے مقررہ چار اوورز میں صرف 24 رنز کے عوض تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

کولن منرو نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جبکہ عثمان شنواری نے بھی ایک وکٹ حاصل کی۔ پشاور زلمی کی جانب سے صہیب مقصود 12 رنز بنا کر ناٹ آوٹ رہے۔
حسن علی اننگز کی آخری گیند پر رن آؤٹ ہوئے جبکہ اس سے پہلے وہاب ریاض کو 11 رنز پر عثمان شنواری نے آؤٹ کیا۔ زلمی کے کپتان ڈیرن سیمی 5 رنز بنا کر محمد عامر کی گیند پر کیچ آوٹ ہوئے۔ اس سے قبل امام الحق 59 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر محمد عامر کی گیند پر بولڈ ہوئے تھے۔ جبکہ لیئم ڈوسن کو بھی محمد عامر نے 9 رنز پر بولڈ کیا تھا۔

پشاور کے دوسرے آوٹ ہونے والے کھلاڑی پولارڈ 12 رنز بنا کر کولن منرو کا شکار ہوئے۔ اس سے پہلے زلمی کے کامران اکمل نے جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 86 رنز بنائے اور کولن منرو کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوئے۔
اتوار کو کراچی نیشنل سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے میچ میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد کراچی کنگز نے عثمان شنواری کی تباہ کن بولنگ کی بدولت کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو ایک رن سے شکست دی تھی۔
جس میں کراچی کنگز نے کامیابی حاصل کر کے پی ایس ایل کے پلے آف مرحلے میں رسائی حاصل کر لی تھی۔

پیر کو کھیلے جانے والے میچ کی خصوصی بات یہ تھی کہ نیشنل سٹیڈیم کراچی میں چھاتی کے سرطان کی آگاہی سے متعلق دن منایا گیا اور اس کے پیش نظر سٹمپس گلابی رنگ کے رکھے گئے تھے۔
پوائنٹس ٹیبل پر اس وقت پشاور زلمی 14 پوائنٹس کے ساتھ پہلی پوزیشن پر ،کوئٹہ گلیڈی ایٹرز بھی 14 پوائنٹس کے ساتھ دوسری پوزیشن پر، اسلام آباد یونائیٹڈ تیسرے نمبر پر جبکہ کراچی کنگز10 پوائنٹس کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے۔

کراچی کنگز کی ٹیم کپتان عماد وسیم، محمد عامر، بابر اعظم، بین ڈنک، کولن انگرم، کولن منرو، لییم لیونگسٹون، سہیل خان، افتخار احمد، عثمان شنواری اور عمر خان پر مشتمل تھی۔
جبکہ پشاور زلمی کپتان ڈیرن سیمی، کامران اکمل، امام الحق، عمر امین، صہیب مقصود، کیرون پولارڈ، لییم ڈوسن، سمین گل، وہاب ریاض، حسن علی، اور ٹائمل ملز پر مشتمل تھی۔