آپ خاندان کی طاقت اور میری سب سے اچھی دوست تھیں

معروف اداکارہ سری دیوی کی موت کے بعد ان کے شوہر بونی کپور نے سری دیوی کے ٹوئٹر ہینڈل سے انھیں یاد کرتے ہوئے آخری ٹویٹ کیا تھا۔

اب سری دیوی کی بڑی بیٹی جھانوی کپور نے اپنی والدہ کو یاد کرتے ہوئے انسٹا گرام پر ایک پوسٹ ڈالی ہے۔

سری دیوی 25 فروری کو دبئی میں انتقال کر گئی تھیں۔ وہ وہاں اپنے بھتیجے کی شادی میں شرکت کے لیے گئی تھیں۔

یہ بھی پڑھیے

٭

 

٭

 

سری دیوی اکثر انسٹاگرام پر اپنی اور جھانوی کی تصاویر ڈالتی تھیں اور جھانوی کے فلمی کریئر کے بارے میں وہ بظاہر پرجوش نظر آتی تھیں۔

اس پوسٹ میں اپنی والدہ سری دیوی کی موت کے بعد جھانوی نے اپنے جذبات کا برملا اظہار کیا ہے۔

انھوں نے اپنی ماں کو پورے ‘خاندان طاقت’ اور اپنی ‘بہترین دوست’ کہا ہے۔ 

انھوں نے لکھا: ‘میں اپنے سینے میں ایک تکلیف دہ خلا محسوس کر رہی ہوں لیکن میں جانتی ہوں کہ مجھے اسی کے ساتھ جینا سیکھنا ہے۔ اسی خالی پن کے ساتھ، میں اب بھی آپ کا پیار محسوس کرتی ہوں۔ مجھے محسوس ہوتا ہے کہ آپ درد و غم سے میری حفاظت کر رہی ہیں۔ جب بھی میں اپنی آنکھیں بند کرتی ہوں تو مجھے صرف اچھی چیزیں یاد آتی ہیں اور آپ ہی یہ سب کر رہی ہیں۔

 

یہ بھی پڑھیے

 

‘آپ ہماری زندگی میں خدا کی نعمت کی طرح تھیں۔ ہمیں آپ کے ساتھ رہنے کا جو بھی وقت ملا وہ نعمت تھا۔ لیکن، آپ اس دنیا کے لیے نہیں تھیں۔ آپ بہت اچھی، بہت پاک، اور پیار سے بھرپور تھیں۔ اس لیے خدا نے آپ کو واپس بلا لیا۔ لیکن کم از کم آپ ہمارے ساتھ رہیں تو سہی۔’

 

انھوں نے مزید لکھا: ‘میرے دوست ہمیشہ یہ کہتے تھے کہ میں سدا خوش رہتی ہوں اور اب مجھے احساس ہوا کہ یہ آپ کی وجہ سے تھا۔ کسی نے کیا کہا میرے لیے کوئی اہمیت نہیں رکھتا تھا، کوئی مصیبت بڑی نہ تھی اور کوئی دن اداس نہیں تھا کیونکہ میرے پاس آپ تھیں۔ اور آپ مجھے چاہتی تھیں۔ مجھے ہمیشہ آپ کی ضرورت تھی۔ آپ میری روح کا حصہ ہو۔ میری سب سے اچھی دوست، میرے لیے سب کچھ۔

 

یہ بھی پڑھیے

 

‘ آپ نے اپنی پوری زندگی میں صرف دیا اور ممی میں بھی آپ کے لیے یہ کرنا چاہتی تھی۔

میری خواہش ہے کہ آپ کو مجھ پر فخر ہو۔ ہر صبح، میں جو بھی کروں اس امید کے ساتھ کروں کہ ایک دن آپ کو مجھ پر فخر ہوگا۔ میں وعدہ کرتی ہوں کہ ہر صبح اسی خیال کے ساتھ اٹھوں گی کیونکہ آپ یہاں ہیں اور میں آپ کو محسوس کر سکتی ہوں۔ آپ میرے، خوشی اور پاپا میں موجود ہیں۔ آپ نے ہم پر جو اپنا تاثر چھوڑا ہے وہ اتنا گہرا کہ ہماری زندگی کے لیے کافی ہے لیکن کبھی بھی مکمل نہیں ہوسکتی۔’