متحدہ عرب امارات میں سڑک کے کنارے گاڑی کھڑی کر کے نماز ادا کرنے پر پابندی

متحدہ عرب امارات میں ڈرائیورز کو کہا گیا ہے کہ سڑک کے کنارے گاڑی کھڑی کر کے نماز ادا کرنے پر جرمانہ عائد کیا جائے گا۔
گلف نیوز کے مطابق سینیئر پولیس حکام کی جانب سے یہ وراننگ دبئی میں پیش آنے والے حادثے کی بعد جاری کی گئی ہے جس میں دو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

پولیس افسر بریگیڈئیر سیف موحیر المازوری نے گلف نیوز کو بتایا کہ خلاف ورزی کی صورت میں ڈرائیو کو 136 ڈالر تک جرمانہ کیا جا سکے گا۔
انھوں نے کہا پیٹرول سٹیشنز پر موجود مساجد نماز کی ادائیگی کے محفوظ مقامات ہیں اور ڈرائیورز کو انھیں استعمال کرنا چاہیے۔
‘ہائی ویز پر یہ قابل قبول نہیں کہ ڈرائیور سڑک کنارے گاڑی کھڑی کر کے نماز ادا کریں، سنیچر کو پیش آنے والا واقعہ دیگر ڈرائیورز کے لیے ایک سنجیدہ پیغام ہے کہ رواں ٹریفک کے قریب سڑک کے کنارے گاڑی کھڑی کرنا کتنا خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔’

ایک اور پولیس افسر نے ٹوئٹر پر پیغام میں کہا کہ’سڑک کا کنارہ نماز کی ادائیگی کے لیے مناسب جگہ نہیں ہے اور اس سے نماز ادا کرنے والوں کی زندگی کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔’
نیشنل نیوز کی ویب سائٹ کے مطابق حادثہ اس وقت پیش آیا جب ایک گاڑی کا ٹائر پھٹنے کے نتیجے میں وہ بے قابو ہو کر نماز ادا کرنے والوں پر چڑھ گئی۔
ویب سائٹ کے مطابق آٹھ افراد کا ایک گروپ مسجد کے باہر سڑک کنارے مغرب کی نماز ادا کر رہا تھا جب گاڑی ان سے ٹکرا گئی اور اس واقعے میں دو افراد ہلاک اور دیگر زخمی ہو گئے جن میں سے تین کی حالت تشویشناک ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گاڑی کی رفتار مقررہ حد سے زیادہ تھی۔
خیال رہے کہ دبئی میں ٹریفک خلاف ورزیوں کے قوانین کو مزید سخت بنایا گیا ہے جس میں رفتار کی حد کی سنگین خلاف ورزی کی صورت میں 816 ڈالر کا جرمانہ شامل ہے۔