رشتے داروں نے کہا عامر جیسی پرفارمنس دکھانا: عثمان خان شنواری

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے فاسٹ بولر عثمان خان شنواری کے مطابق ان کے رشتے داروں نے کہا تھا کہ محمد عامر کی جگہ ٹیم میں شامل ہوئے ہو اسی کی طرح پرفارمنس بھی دکھانا۔
عثمان خان شنواری نے سری لنکا کے خلاف پانچویں اورآخری ون ڈے انٹرنیشنل میں شاندار بولنگ کرتے ہوئے صرف چونتیس رنز دے کر پانچ وکٹیں حاصل کیں ۔یہ ان کا محض دوسرا ہی ون ڈے انٹرنیشنل ہے جس میں انہوں نے اپنے کریئر کی بہترین بولنگ کی ہے۔

عثمان خان شنواری کہتے ہیں کہ ان پریقیناً دباؤ تھا کہ وہ جس بولر کی جگہ ٹیم میں شامل ہوئے ہیں اسی کی طرح پرفارمنس بھی دیں اور یہ بات انہیں ان کے رشتے داروں نے بھی باور کرائی تھی۔
عثمان خان شنواری کا کہنا ہے کہ محمد عامر سے وہ اپنا موازنہ نہیں کر سکتے وہ بہت اچھے بولر ہیں اور وہ ان کی بولنگ سے سیکھتے ہیں۔ وہ محمد عامر کے ان فٹ ہونے کے سبب ٹیم میں شامل کیے گئے اور انہیں خوشی ہے کہ انہوں نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

عثمان خان شنواری نے چار سال قبل اس وقت خبروں میں جگہ بنائی تھی جب انہوں نے قومی ٹی ٹوئنٹی کپ کے فائنل میں زرعی ترقیاتی بینک کی طرف سے سوئی نادرن گیس کی مضبوط بیٹنگ لائن کو بکھیر کر رکھا دیا تھا اور صرف نو رنز دے کر پانچ وکٹیں حاصل کی تھیں۔

اسی کارکردگی کی بنا پر انہیں سری لنکا کے خلاف متحدہ عرب امارات میں کھیلی گئی ٹی ٹوئنٹی سیریز کے لیے پاکستانی ٹیم میں شامل کرلیا گیا تھا۔ وہ اس سیریز کے دو میچوں میں کوئی وکٹ حاصل نہیں کر سکے تھے۔

عثمان خان شنواری کی واپسی گذشتہ ماہ ورلڈ الیون کے خلاف ہوئی اور وہ دو میچز کھیلے لیکن کوئی خاص تاثر قائم نہ کر سکے۔
اس بارے میں مزید پڑھیے

عثمان خان شنواری کا تعلق خیبر ایجنسی سے ہے لیکن وہ پشاور میں رہتے ہیں اور جب بھی وقت ملتا ہے وہ اپنے گاؤں میں جاکر نوجوان کرکٹرز کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔
عثمان کا کہنا ہے کہ قبائلی علاقوں میں نوجوان کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں لیکن وہاں سہولتیں نہیں ہیں۔
عثمان سے پوچھا گیا کہ ان کے علاقے کے لوگ شاہد آفریدی کو کھیلتا دیکھنے دیوانہ وار سٹیڈیم کا رخ کرتے تھے تو کیا آپ ان لوگوں کو دوبارہ سٹیڈیم میں لانے کا سبب بنیں گے؟ تو ان کا جواب تھا کہ پختون قوم کرکٹ کی بہت شوقین ہے چاہے کوئی پٹھان ٹیم میں کھیل رہا ہو یا نہیں وہ کرکٹ میچ ضرور دیکھتی ہے۔ ان کی کوشش ہو گی کہ اچھی سے اچھی کارکردگی دکھائیں تاکہ پختون میچ دیکھنے آتے رہیں۔