ٹیسٹ سیریز میں شکست اور چیمپیئنزٹرافی کے بعد پاکستان کی پہلی ون ڈے سیریز

پاکستان اور سری لنکا کے درمیان پانچ ون ڈے انٹرنیشنل میچوں کی سیریز کا پہلا میچ آج دبئی میں کھیلا جا رہا ہے۔
پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ ٹیسٹ سیریز کی شکست کے نتیجے میں ان پر دباؤ ضرور ہے لیکن انہیں امید ہے کہ وہ اس دباؤ سے نکلنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔
٭

٭

٭

یاد رہے کہ پاکستانی ٹیم کو سری لنکا کے خلاف ٹیسٹ سیریز کے دونوں میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے تاہم سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ ون ڈے ٹیم متوازن ہے اور اس میں چند سینیئر کھلاڑی بھی شامل ہیں۔

سرفراز احمد کا بحیثیت کپتان ون ڈے ریکارڈ بہت اچھا ہے۔ وہ اب تک نو ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں ٹیم کی قیادت کر چکے ہیں جن میں سے سات جیتے ہیں۔
اس سال جون میں چیمپیئنز ٹرافی جیتنے کے بعد یہ پاکستانی ٹیم کی پہلی ون ڈے سیریز ہے۔
موجودہ ون ڈے سیریز میں پاکستان کی تقریباً وہی ٹیم ہے جو چیمپیئنز ٹرافی جیتی تھی۔ صرف اظہر علی اور محمد عامر ان فٹ ہونے کے سبب ٹیم کا حصہ نہیں ہیں ان کی جگہ امام الحق اور عثمان شنواری کو سکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

پاکستانی بیٹنگ لائن فخرزمان، احمد شہزاد، بابراعظم، شعیب ملک، محمد حفیظ اور سرفراز احمد پر مشتمل ہے جبکہ بولنگ اٹیک میں حسن علی، جنید خان، رومان رئیس، شاداب خان اور عماد وسیم پر مشتمل ہے۔
سری لنکا کی ٹیم اپل تھارنگا کی قیادت میں میدان میں اترے گی۔ٹیسٹ کپتان دنیش چندی مل عام کھلاڑی کی حیثیت سے ٹیم میں شامل ہیں۔
سری لنکا کی ٹیم کا حالیہ ون ڈے ریکارڈ بہت خراب رہا ہے اور وہ آخری 21 ون ڈے انٹرنیشنل میں سولہ ہار چکی ہے۔ وہ تین سال سے کسی بھی بڑی ٹیم کے خلاف ون ڈے سیریز نہیں جیت سکی ہے۔ آخری بار اس نے 2014 ء میں اپنی سرزمین پر انگلینڈ کے خلاف سات ون ڈے میچوں کی سیریز پانچ دو سے جیتی تھی۔

پاکستان اور سری لنکا کی ٹیمیں چیمپیئنز ٹرافی میں مدمقابل آ چکی ہیں اور وہ میچ پاکستان جیتا تھا۔
دونوں ٹیموں کے درمیان آخری دو طرفہ ون ڈے سیریز سال 2015 میں کھیلی گئی تھی جو پاکستان نے تین دو سے جیتی تھی۔
پاکستانی ٹیم کا متحدہ عرب امارات میں ون ڈے ریکارڈ ٹیسٹ کے برعکس اچھا نہیں ہے اور وہ دو ہزار نو سے اب تک یہاں کھیلی گئی 12 میں سے صرف تین ون ڈے سیریز جیت سکی ہے جبکہ نو میں اسے شکست ہوئی ہے۔
ون ڈے کی عالمی رینکنگ میں دونوں ٹیموں کے درمیان زیادہ فرق نہیں ہے۔ پاکستان کا نمبر اس وقت چھٹا ہے جبکہ سری لنکا آٹھویں نمبر پر ہے لیکن اگر سری لنکا کی ٹیم یہ سیریز پانچ صفر سے جیتنےمیں کامیاب ہوتی ہے تو وہ چھٹے نمبر پر آ جائے گی۔