خراب تعلقات کے ذمہ دار پاکستان اور افغانستان دونوں ہیں: افغان سفیر

پاکستان میں افغانستان کے سفیر عمر زاخیلوال نے کہا ہے کہ افغانستان اور پاکستان دونوں ملکوں نے اپنے دوطرفہ تعلقات کو بگاڑنے میں کردار ادا کیا ہے۔
انھوں نے پاکستان اور افغانستان کے کشیدہ تعلقات کو سدھارنے کے لیے اسلام آباد میں ہونے والے ٹریک ٹو مذاکرات کے موقعے پر کہا کہ افغانستان نے خراب تعلقات میں یوں کردار ادا کیا کہ اس نے انڈیا اور پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات میں توازن نہیں رکھا جو غلط تھا۔

رائل ڈینش ڈیفنس کالج اور ریجنل پِیس انسٹی ٹیوٹ کے زیرِ اہتمام منگل کو ہونے والے اس اجلاس میں زاخیلوال نے کہا کہ ’افغانستان کو چاہیے کہ وہ پاکستان کو یقین دلائے کہ اس کے بھارت کے ساتھ تعلقات پاکستان کی سلامتی کے لیے خطرہ نہیں ہیں۔‘

انھوں نے کہا کہ ’دوسری جانب پاکستان میں ریاستی ادارے عوام سے عوام کے تعلقات، تجارت اور سرحد کی بندش وغیرہ میں مداخلت کر رہے ہیں۔‘
افغان سفیر نے مزید کہا کہ ’پاکستان جہاد میں ملوث رہا ہے اور اس کا خیال تھا کہ کابل کی حکومت کو احکامات جاری کرنا درست اقدام ہے، لیکن یہ حکمتِ عملی درست ثابت نہیں ہوئی۔‘
انھوں نے کہا کہ ‘ہم نے دو طرفہ تعلقات سدھارنے کے لیے چین اور امریکہ پر بھروسہ کیا لیکن کبھی ایک دوسرے پر اعتماد نہیں کیا۔‘
زاخیلوال نے کہا کہ دونوں ملکوں کو چاہیے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ان کی سرزمین ایک دوسرے کے خلاف استعمال نہیں ہو گی۔