انڈین باکسر کی چینی حریف باکسر کو بیلٹ واپس کرنے کی پیشکش

ایک انڈین باکسر نے اپنے چینی حریف کو شکست دینے کے بعد چیمپیئن شپ بیلٹ امن کے اظہار کے لیے واپس کرنے کی پیشکش کی ہے۔
خیال رہے کہ حالیہ چند ہفتوں سے انڈیا اور چین کے درمیان ڈوکلام کے تنازعے کے باعث کشیدگی پائی جاتی ہے۔
اولمپک میڈلسٹ وجیندر سنگھ نے سنیچر کو چینی باکسر ذوالفقار میامیاتیالی کو شکست دے کر ان سے ڈبلیو بی او اوریئنٹل سپر مڈل ویٹ بیلٹ حاصل کر لی تھی۔
تاہم انھوں نے اپنی فتح ‘انڈیا چین دوستی’ کے نام کی اور کہا کہ وہ یہ بیلٹ واپس کرنا چاہتے ہیں۔
انڈیا اور چین کے مابین جون سے ڈوکلام کے سرحدی علاقے میں کشیدگی پائی جارہی ہے۔ چین اس علاقے میں سڑک کی تعمیر چاہتا ہے جبکہ انڈیا اس سڑک کی تعمیر کو اپنی سلامتی کے لیے خطرہ سمجھتا ہے۔
ممبئی میں منعقدہ اس باکسنگ مقابلے میں 31 سالہ وجیندر سنگھ کی فتح کا جشن پورے انڈیا میں منایا گیا۔
لیکن ان کی جانب سے امن کی پیغام کو کچھ حلقوں کی جانب سے پذیرائی نہیں ملی۔
یوگا گرو اور کاروباری شخصیت بابا رام دیو نے اس حوالے سے ٹویٹ کیا تھا کہ ‘چین کو ممبئی میں بڑی شکست کا سامنا ہوا ہے اور یہی ڈوکلام میں ہوگا۔’
تاحال یہ واضح نہیں ہے کہ اس کے چینی حریف نے وجیندر سنگھ کی اس پیش کش کا کیا جواب دیا ہے یا پھر مقابلے کے منتظمیں انھیں بیلٹ واپس کرنے کی اجازت دیں گے یا نہیں۔
واضح رہے کہ جون شروع ہونے والے سرحدی تنازعے کے بعد دونوں ملکوں نے سرحدوں پر اپنی افواج میں اضافہ کیا ہے اور ساتھ ساتھ ایک دوسرے کو پیچھے ہٹنے کو کہا ہے۔
یہ معاملہ اس وقت اٹھا جب انڈیا نے چین کی جانب سے سرحدی علاقے میں سڑک کشادہ کرنے کے منصوبے کی مخالفت کی۔ یہ علاقہ انڈیا کے شمال مشرقی صوبی سکم اور پڑوسی ملک بھوٹان کی سرحد سے ملتا ہے اور اس علاقے پر چین اور بھوٹان کا تنازع جاری ہے جس میں انڈیا بھوٹان کی حمایت کر رہا ہے۔

انڈیا کو خدشہ ہے کہ اگر یہ سڑک مکمل ہو جاتی ہے تو اس سے چین کو انڈیا پر سٹریٹیجک برتری حاصل ہو جائے گی۔