بالی وڈ کی پہلی پن اپ گرل‘ کون تھیں؟

موجودہ سماج کو مردوں کے غلبے والا معاشرہ کہا جاتا ہے تاہم خواتین کے بغیر معاشرے کا تصور ادھورا ہے اور فلمی صنعت تو اس کے بغیر بے رونق کہی جا سکتی ہے۔
فرانسیسی اداکارہ كلاؤڈيہ دی فرنس نے اسی مناسبت سے ایک بار کہا تھا کہ ’کرۂ ارض سے اگر عورت کو ہٹا دیا جائے تو زمین تحت الثریٰ میں جا لگے گی۔‘
لیکن بالی وڈ میں فلموں کی پہلی اداکارہ سے متعلق بات کی جائے تو آپ کو یہ جان کر حیرت ہوگی کہ چونکہ کوئی خاتون پہلی فلم میں کام کرنے کے لیے تیار نہیں ہوئی اس لیے پہلی اداکارہ کا کردار بھی ایک مرد نے کیا تھا۔

ان کا نام شریمان سالونكے تھا جنھوں نے دادا صاحب پھالکے اور بالی وڈ کی پہلی فلم راجہ ہريش چندر میں اداکاری کی تھی۔
دادا صاحب پھالكے کی دوسری فلم تھی ’بھسماسر موہنی‘ جس میں پہلی بار حقیقی طور پر دو خواتین کو کام کرنے کا موقع ملا جن کا نام درگا اور کملا تھا۔ لیکن چونکہ درگا بائی لیڈ رول میں تھیں اس لیے پہلی بالی وڈ ہیروئین ہونے کا کریڈٹ انہی کو ملتا ہے۔

لیکن جس اداکارہ کا جادو عوام کے سر پہلی بار چڑھ کر بولا ان کا نام منداكنی تھا۔ وہ دادا صاحب پھالكے کی بیٹی تھیں۔
بالی وڈ میں فلموں کی پہلی سٹار سلوچنا تھیں جن کا اصلی نام روبی میئر تھا۔ وہ ٹیلیفون آپریٹر کا کام کرتی تھیں جو پہلی بار ’کوہ نور فلم کمپنی‘ کے تحت موہن بھونانی کی فلم ’وير بالا‘ میں آئیں تھیں۔ سلوچنا کی ادائیں لوگوں کو اتنی پسند آئیں کہ وہ خاموش فلموں کی پہلی سٹار بن گئیں۔

ایک دور میں اداکارہ ہیما مالنی کو فلمی دنیا کی ’ڈریم گرل‘ کہا جاتا تھا لیکن فلم مورخین کے مطابق اداکارہ ’دیویکا رانی‘ کو انڈین سنیما کی پہلی ’ڈریم گرل‘ کا خطاب دیا گیا تھا۔
وہ فلم ’اچھوت کنیا‘ میں اشوک کمار کی ہیروئن تھیں۔ ’فرسٹ لیڈی آف دی انڈین سکرین‘ بھی دیویکا رانی کو کہا جاتا ہے جو اپنے زمانے کی غیر معمولی اداکارہ تھیں۔ پنڈت جواہر لال نہرو نے بھی ایک بار انھیں خط لکھ کر ان کی اداکاری کی تعریف کی تھی۔

1934 میں ایک فلم ’ہنٹروالی‘ آئی تھی جس کی ہیروئن نادیہ تھیں جو بعد میں فلمی دنیا کی سب سے پہلی ’سٹنٹ کوئین‘ کہلائیں۔
فلموں سے متعلق ایک معروف میگزین کے ایڈیٹر بی کے كرنجيا نے اپنے ایک مضمون میں لکھا تھا کہ مدھوبالا وہ پہلی اداکارہ تھیں جنھوں نے لفظ ’سٹار‘ کو صحیح معنی عطا کیے۔ پریس پر پابندی لگانے والی پہلی فنکار مدھوبالا ہی تھیں جو بالی وڈ کی ’وینس‘ کے نام سے بھی معروف ہوئیں۔

تقریباً پانچ سو فلموں میں اپنی اداکاری اور مسحور کن رقص سے ناظرین کو اپنی طرف متوجہ کرنے والی ہیلن کو بالی وڈ کی پہلی ’کیبرے کوئن‘ کا خطاب دیا گيا۔
فلموں پر لکھنے والے جے پرکاش چوكسے کا کہنا ہے کہ فلموں میں اعلی طبقے کی خواتین کے لیے راہ ہوار کرنے کا کام اداکارہ درگا کھوٹے نے کیا جنھوں نے خاموش فلموں کے دور سے لے کر جدید دور کی فلموں تک کا طویل سفر طے کیا۔

انھوں نے اس دوران ’مغل اعظم‘ اور ’باورچی‘ جیسی فلموں میں کئی یادگار کردار نبھائے۔ بہت کم لوگ اس بات سے واقف ہیں کہ درگا پہلی ایسی اداکارہ تھی جو گریجویٹ تھیں۔
بیگم پارا اپنے زمانے کی سب سے ’بنداس گرل‘ کے طور پر جانی جاتی ہیں۔ اس زمانے نے میں ان کے فوٹو شوٹ کافی مشہور ہوئے تھے۔ انھیں بالی وڈ میں پہلی بار’پن اپ گرل‘ کا خطاب ملا تھا۔ بعد میں انھوں نے دلیپ کمار کے بھائی ناصر خان سے شادی کر کے گھر بسا لیا تھا۔