سلمان خان: مجھے صرف ایک ہی تاریخ یاد رہتی ہے

قطرینہ کیف 16 جولائی کو 34 سال کی ہونے والی ہیں لیکن ان کے دوست اور بالی وڈ کے ‘سلطان’ سلمان خان نے ان کی سالگرہ کا جشن پہلے ہی منانا شروع کر دیا ہے۔
جب سے رنبیر کپور کے ساتھ قطرینہ کا بریک اپ ہوا ہے سلمان ہی قطرینہ کے ارد گرد منڈلاتے نظر آتے ہیں۔ پارٹیاں ہوں یا ایوارڈ شوز، یا پھر پریس کانفرنس اور کیوں نہ ہو رنبیر سے بریک اپ کے بعد رونے کے لیے سلمان ہی نے انھیں اپنا کندھا اور ان کے کریئر کو سہارا دیا تھا۔

قطرینہ فلم ‘فتور’ اور ‘بار بار دیکھو’ کی ناکامی سے بھی پریشان تھیں۔ ایسے میں سلمان ایک بار پھر ایک ہمدرد کی شکل میں ان کی زندگی میں داخل ہوئے اور اب ہر تقریب میں دونوں ساتھ ساتھ اور ایک دوسرے میں مگن نظر آتے ہیں۔

٭

٭

نیویارک میں 2017 کے آئیفا ایوارڈ سے متعلق پریس کانفرنس میں سلمان کے ساتھ قطرینہ، انوپم کھیر اور کیرتی سنن موجود تھیں۔ بات کرتے کرتے سلمان نے درمیان میں رک کر انوپم کھیر سے پوچھا کہ ایوارڈ کس تاریخ کو شروع ہو رہے ہیں۔ ساتھ ہی یہ بھی کہہ بیٹھے کہ تاریخ کے معاملے میں وہ بہت کمزور ہیں انھیں صرف قطرینہ کے یوم پیدائش کی تاریخ یاد رہتی ہے اور اتنا کہہ کر برتھ ڈے سانگ گانا شروع کر دیا۔

اب سلمان خان جیسا سپر سٹار کچھ کرے تو اسے نظر انداز کرنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہو جاتا ہے۔ پھر کیا تھا سٹیج پر موجود تمام لوگوں سمیت میڈیا بھی سلمان کے ساتھ سر سے سر ملانے لگا۔ بہرحال سلمان کے اس رویے سے صاف ظاہر ہے کہ وہ قطرینہ کا دل جیتنے کی ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں جس میں انھیں کامیابی بھی مل رہی ہے کیونکہ جب ایک نامہ نگار نے قطرینہ سے پوچھا کہ جب وہ انڈیا پہلی مرتبہ آئیں تو انھیں اس وقت کی کونسی بات یاد ہے تو قطرینہ کا جواب تھا ‘سلمان سے ملاقات۔’

اس وقت قطرینہ کا ستارہ زوروں پر ہے۔ رنبیر کہتے ہیں کہ انھیں اپنی زندگی میں قطرینہ کی ضرورت ہے جبکہ سلمان ہیں کہ انھیں قطرینہ کے سوا کچھ یاد نہیں رہتا۔ پیشہ ورانہ طور پر قطرینہ فی الوقت عامر خان، سلمان اور شاہ رخ تینوں کے ساتھ فلم کر رہی ہیں۔

فلم ‘جگا جاسوس’ میں اہم کردار نبھانے والی اداکارہ سیانی گپتا کا کہنا ہے کہ وہ بالی وڈ کی بہت بڑی سٹار بننا چاہتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر آپ سٹار نہیں ہیں تو آپ کے ٹیلنٹ اور محنت کی کوئی قیمت نہیں ہوتی۔

سیانی کا کہنا تھا کہ فلم ‘جگا جاسوس’ میں ان کا جو کردار طے کیا گیا تھا اسے بدل کر مزید کم کر دیا گیا۔ ان کا خیال تھا کہ ہو سکتا ہے کہ فلم کی ضرورت کے لیے ایسا کیا گیا ہو لیکن اگر آپ بڑے سٹار ہوں تو پھر کوئی ایسا کرنے کی جرات نہیں کرتا۔

سیانی نے چند سال پہلے کالکی کوئچلن کی فلم ‘مارگریٹا ود اے سٹرا’ سے فلموں میں قدم رکھا تھا جس کے بعد شاہ رخ خان کی فلم ‘فین’ اور اکشے کمار کی ‘جولی ایل ایل بی 2’ میں بھی کام کیا۔ لیکن لگتا ہے کہ ان بڑے ستاروں کی چمک میں ان کا وجود کہیں دھندلا گیا اور یہی حقیقت سیانی کے لیے باعثِ تشویش ہے۔

سیانی کی صلاحیتوں سے انکار نہیں کیا جا سکتا لیکن اس سے پہلے بھی انڈسٹری میں کئی سیانیاں آئیں لیکن ان کی محنت اور ٹیلنٹ کے ساتھ ان کی مستقل مزاجی نے انھیں بالی وڈ کی ‘کوین’ بنا دیا جس کی ایک مثال کنگنا رناوت ہیں جو آج اپنی شرطوں پر کام کرتی ہیں۔

سری دیوی انڈین سنیما کی ان ہیروئنز میں سے ایک ہیں جنھوں نے کافی لمبے عرصے تک انڈسٹری پر راج کیا۔ سری دیوی خوبصورت ہونے کے ساتھ ساتھ گلیمرس اور انتہائی باصلاحیت اداکارہ رہی ہیں۔
انھوں نے نہ صرف لوگوں کا دل جیتا بلکہ بے شمار ایوارڈز اور اعزاز بھی حاصل کیے۔ لیکن اس شہرت اور کامیابی کے ساتھ ساتھ بہت سی ایسی چیزیں وابستہ ہوتی ہیں جنھیں نہ چاہ کر بھی اپنانا پڑتا ہے۔
سری دیوی کا کہنا ہے کہ وقت کے ساتھ خود کو اندر اور باہر سے ایک پرفیکٹ کنڈیشن میں رکھنے کا پریشر بہت بڑا ہوتا ہے اور سوشل میڈیا کی وجہ سے یہ پریشر اور بڑھ گیا ہے۔
گھر سے نکلتے وقت آپ کو انتہائی احتیاط برتنی پڑتی ہے کہ آپ نے کیا پہنا ہے اور آپ کیسے لگ رہے ہیں کیونکہ ذرا سی چوک آپ کو سوشل میڈیا پر ٹرولز کا شکار بنا سکتی ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگرآپ اپنی زندگی میں جہنم جیسے حالات سے بھی گزر رہے ہوں باہر سے آپ کو خوش اور خوبصورت نظر آنا ہے۔